ڈیرہ اسماعیل خان کے راستے درجنوں نان کسٹم پیڈ گاڑیاں روزانہ پنجاب میں داخل ہوتی ہیں ( داور کنڈی ایم این اے )
ڈیرہ اسماعیل خان ( نیلاب نیوز نیٹ ورک )
پاکستان تحریک انصاف سے تعلق رکھنے والے رکنِ قومی اسمبلی داور کنڈی کا کہنا ہے کہ ڈیرہ اسماعیل خان کراچی اور بلوچستان سے آنے والی نان کسٹم پیڈ گاڑیوں کا پنجاب میں داخلے کا سب سے بڑا گیٹ وے ہے ۔ ان کا کہنا تھا کہ روزانہ تیس سے چالیس نان کسٹم پیڈ گاڑیاں ڈیرہ اسماعیل خان کے راستے پنجاب کے مختلف علاقوں اور اسلام آباد کے لیئے گذرتی ہیں ۔ ایف ایم 91 ڈی آئی خان کے پروگرام ’’ جی ٰہاں ۔ جی نہیں ‘‘ میں گفتگو کرتے ہوئے داور کنڈی ایم این اے کا کہنا تھا کہ ضلع ڈیرہ اسماعیل خان کی انتظامیہ مولانا برادران کے ہاتھوں میں کھیل رہی ہے ۔ پولیس نان کسٹم پیٖڈ گاڑیوں کی سمگلنگ روکنے میں ناکام رہی ہے بڑی تعداد میں نان کسٹم پیڈ گاڑیاں ژوب ۔ کراچی اور بعض مرتبہ پشاور سے ڈی آئی خان پہنچتی ہیں جو کوٹلہ جام اور چشمہ بیراج کے راستے پنجاب میں داخل ہو جاتی ہیں ۔ ان کا کہنا تھا کہ نہ تو ان نان کسٹم پیڈ گاڑیوں کو ڈیرہ اسماعیل خان کی حدود میں داخل ہونے سے پہلے کہیں روکا جاتا ہے اور نہ ہی یہ ڈیرہ کی حدود میں پکڑی جاتی ہیں جبکہ پنجاب میں داخلے کے بعد تو اُن کو کوئی پوچھنے والا نہیں ہوتا ۔ داور کنڈی کا کہنا ہے نان کسٹم پیڈ گاڑیوں کی آزادانہ نقل و حمل کی وجہ سے قومی خزانے کو ناقابلِ تلافی نقصان پہنچ رہا ہے ۔ سمگل کی جانے والی اکثر گاڑیوں میں مستورات سوار ہوتی ہیں۔ پروگرام میں ایک صحافی کے سوال کے جواب میں دور کنڈی ایم این اے نے تسلیم کیا تھا کہ ان کے پاس بھی ایک نان کسٹم پیڈ گاڑی تھی جو انہوں نے فروخت کر دی ہے ۔

حصہ