اس سال جمشیددستی پر بھی ’’تحفظِ نسواں قانون ‘‘ کا اطلاق ہو جائے گا ۔۔۔
شہنائی گونجنے کی پیشن گوئی ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ شیخ رشید کنوارے رہ جائیں گے
2016 ء کو پاکستان میں اہم نوعیت کی تبدیلیوں کا سال قرار دیا جارہا ہے ۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ مظفر گڑھ سے تیسری بار قومی اسمبلی کا رکن بننے والے جمشید دستی کی زندگی میں بھی تبدیلی آنے والی ہے ۔ جمشید دستی پارٹی بدلنے اور ایشوز کی سیاست کرنے کے حوالے سے منفرد شہرت کے حامل ہیں ۔ اپنے علاقے میں غریب طبقات کی بروقت مدد کرنے اور موقع پر پہنچنے کی شہرت رکھنے کی وجہ سے انہیں جمشید دستی ون فائیو کہا جاتا ہے ۔ ۔ جمشید دستی نے سیاست میں آنے کے بعد گدھا گاڑی اور بس بھی چلائی لیکن گھر چلانے کے تجربے سے نہیں گذرے ۔ بتایا جاتا ہے کہ ان کی والدہ نے ان کے لئے ملتان میں ایک رشتہ تلاش کیا ہوا ہے قریبی ذرائع کے مطابق جمشید دستی کی نسبت بھی طے ہے ۔ لڑکی بہاؤ الدین زکریا یونیورسٹی سے بی ایس سی کیئے ہوئے ہے ۔ بعض قریبی ذرائع کا کہنا ہے جمشید دستی کی والدہ کا اصرار ہے کہ سالِ رواں میں جمشید دستی کو رشتہ ازدواج میں منسلک کر دیا جائے ۔لہذا قوی اُمید ہے اس سال جمشید دستی کی شادی ہو جائے گی ۔ ان کے ہاں شہنائی گونج اُٹھنے کے بعد ان پر پنجاب میں نافذ کیئے جانے والے تحفظِ نسواں قانون کا اطلاق ہو جائے گا ۔ اور پنجاب سے تعلق رکھنے والے کنوارے ارکانِ پارلمنٹ میں شیخ رشید کے تنہا رہ جانے کا امکان ہے

حصہ