اں ظالم چور دو بہنوں کا جہیز اور بچے کے گلک(Mony Box ) سے نقدی لوٹ کے لے گئے
کندیاں ( غلام یاسین سے )
کندیاں کے محلہ نقشبندی میں گزشتہ رات محمد اقبال نامی ایک ریلوے ملازم کے گھر ہونے والی چوری کی واردات میں نامعلوم چور دو بہنوں کی شادی کے لیے تیار جہیز کے زیورات ،کپڑے ،اور نقدی مالیتی تقریباًپانچ لاکھ چوری تو کر ہی لیے ۔ان اور ظالم چوروں نے گھر کے ایک بچے کے گلک (گُوگا)کو بھی نہ بخشا، اور گلک توڑکر اس میں سے پائی پائی اکھٹی کی گئی نقدی بھی نکال لی ۔چوروں کے اس عمل سے اس بچے کے دل پر کیا گزرے ہو گی اس کا حال تو اللہ ہی جانتا ہے لیکن بے رحم چوروں کے اس عمل سے معصوم بچے کے مستقبل کے جو خواب چکنا چور ہو گئے اس کا جواب دہ کو ن ہو گا۔عوامی حلقوں نے ڈی پی او میانوالی اپیل ہے کہ وہ اس معصوم بچے کے خواب توڑنے والوں کا سراغ لگا کر گلک میں اکھٹی کی گئی رقم واپس دلوائیں اور چوروں کو قرار واقعی سزا دلوائی جائے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ یہ ضلع میانوالی کی تاریخ کی انوکھی چوری ہے جس میں چور معصوم بچے کا قانون سے اعتماد بھی چوری کرکے لے گئے ۔۔۔

حصہ