ٹریفک پولیس پنجاب نے ڈرائیوروں کا جینا حرام کر دیا ہے ۔ پنجاب بھر سے لاکھوں روپئے روزانہ رشوت اکٹھی کی جاتی ہے ۔ آل پاکستان ٹرانسپورٹ ورکر فیڈریشن یونین ضلع میانوالی کے سینئر ممبر اور انسدادِکرپشن ٹائیگر فورس میانوالی کے صدر حاجی گل مقصود خان جو ان دنوں ادائیگی عمرہ کے لیئے سعودی عرب میں ہیں انہوں نے بذریعہ فون میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ رمضان المبارک کے آخری عشرہ کے دوران پنجاب بھر باالعموم اور ضلع میانوالی میں باالخصوص ٹریفک پولیس نے عوام کا بھر پور استحصال کیا ۔ میانوالی سے گذرنے والے ٹرکوں اور ٹرالوں کو ناجائز تنگ کر کے مختلف حیلوں بہانوں سے عیدی اکٹھی کی گئی ۔ انہوں نے کہا عمرہ کی ادایئگی سے قبل انہوں نے ایک درخواست میں ایس پی ٹریفک سرگودھا کو ڈی ایس پی ٹریفک میانوالی کی ڈرائیوروں سے روا رکھی جانے والی ستم ظریفیوں کے بارے میں آگاہ کیا تھا ان کی جانب سے کوئی نوٹس نہ لیا گیا تو ایک تحریری درخواست کے ذریعے آئی جی پنجاب ، ڈی آئی جی ٹریفک پنجاب پولیس لاہور ،اور دیگر اعلی افسران کو ارسال کی تھی جس میں موقف اختیار کیا گیا تھا کہ ’’ٹریفک پولیس کے اعلیٰ افسران کے نام پرلاکھوں روپئے وصول کیئے جاتے ہیں ۔ میانوالی ڈی ایس پی پولیس اور عملے نے ڈرائیوروں کی چمڑی اُڈھیر رکھی ہے ۔ دن رات پیسے وصول کرتے ہیں ۔ ڈھک پہاڑی میانوالی پر تعینات عملہ سے روزانہ 5000 روپئے وصول کیئے جاتے ہیں ۔ جس کی وجہ سے روزانہ پہاڑی راستہ بند ہوتا ہے ۔ڈرائیونگ لائسنس کے عوض رشوت وصول کی جارہی ہے ۔L.T.V اور H.T.V لائسنس 7000 روپئے اور کار کا لائسنس 5000 روپئے میں بنایا جا رہا ہے ‘‘ ۔۔۔۔۔ گل مقصود خان نے کہا کہ وہ عمرہ کی ادائیگی سے واپسی کے بعد اس کرپشن کے خلاف احتجاجی مہم چلائیں گے ۔ انہوں نے کہا اب دمادم مست قلندر ہو گا ۔ ٹریفک پولیس کی چیرہ دستیاں مزید برداشت نہیں کی جائیں گی ۔ 13607868_894786377317792_1334892374_n

حصہ