واں بھچراں (نامہ نگار)واں بھچراں میں قائم سرکاری ہسپتال میں علاج معالجہ کی سہولیات کے فقدان کے باعث مکینوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔ مختلف پوسٹوں پر مستقل سٹاف تعیناتی کے بجائے عارضی بنیادوں پر سٹاف کی ڈیوٹیاں لگا کر وقت ٹپاؤ پالیسی پر عمل کیاجارہا ہے۔ ہسپتال سے ادویات غائب ہیں اور صفائی کے ناقص ترین انتظامات کیوجہ سے مریض ٹھیک ہونے کی بجائے اُلٹا بیمار ہوکر جاتاہے جبکہ غریب اور مستحق مریض ادویات کے حصول کیلئے رُل گئے ہیں۔ مریضوں کو ہسپتال سے باہر پرائیویٹ ٹیسٹ کروانے پرمجبور کیاجاتا ہے۔ پرائیویٹ لیبارٹریوں کے مالکان من مانے ریٹ مقرر کرکے غریب اور مجبورمریضوں کی مجبوریوں سے فائدہ اٹھا رہے ہیں۔ شام کو ہسپتال ایک ڈسپنسر کے سپرد کردیاجاتا ہے جبکہ ہسپتال کی ایمبولینس پر عملہ سیرسپاٹے کرتا ہے۔ رورل ہیلتھ سنٹر واں بھچراں میں سہولیات کی عدم فراہمی پر مکینوں نے شدید احتجاج کرتے ہوئے وزیراعلیٰ پنجاب ،سیکرٹری ہیلتھ پنجاب ،کمشنر سرگودھا، ڈی سی اومیانوالی اور ای ڈی اوہیلتھ میانوالی سے فوری طورپر نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے

حصہ